سمارٹ لاک ڈاؤن کے مثبت نتائج مریضوں میں 28 فیصد کمی

ملک بھر میں کرونا وائرس سے متاثرہ علاقوں میں اسمارٹ لا ک ڈاؤن کے مثبت نتائج آنا شروع ہوگئے.
اور کرونا کی مصدقہ کیسز میں نمایاں کمی آگئے کرونا کے خلاف یہ کامیابی سمارٹ لاک ڈاؤن پر عملدرآمد اور عوام کے رویے میں تبدیلی کی مرہون منت ہے.
دنیا بھر میں اس بات کا احساس کیا گیا کہ پورے پورے ملک کو بند کرنا ناممکن نہیں ہے.
جرمنی اٹلی اور پرتگال اب کرونا کے نئے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے غور کر رہے ہیں کہ پورا ملک بند کرنے کی بجائے چھوٹے چھوٹے علاقوں کو بند کر رہے ہیں. پاکستان کے لئے سمارٹ لاک ڈاؤن کا فیصلہ آسان نہیں تھا تاہم وزیراعظم نے مختلف حلقوں کی طرف سے تنقید کے باوجود اس فیصلے کو اختیار کیا تھا کہ کرونا کے پھیلاؤکو روکنے کے ساتھ ساتھ عوام کو معاشی مشکلا ت سے بچایا جا سکے.
اسد عمر نے کہا کہ بھارت میں کرونا مریضوں کی تعداد پاکستان کے مقابلے میں دس گنا زیادہ ہے.
رپورٹ کے مطابق پاکستان میں کرونا سے اموات کی شرح کم ہو کر 2.1% ہوگئے.
جبکہ بھارت میں مودی کے سخت ترین اقدام کے باوجود یہ شرح2.7 فیصد پر برقرار ہے سخت پابندیوں کے باوجود بھارت میں گزشتہ روز 475 اموات ہوئیں جبکہ 26 ہزار پانچ سو چھپن کرونا کے کیس سامنے آیے جو کہ ایک دن میں اب تک سب سے زیادہ تعداد ہے.

اپنا تبصرہ بھیجیں