ماسک کی تاکید کرنے والا ڈرائیور تشدد سے دم توڑ گیا

ماسک پہننے کی ہدایت پر مسافروں نے مار مار کر بس ڈرائیور کو ہلاک کردیا.
پولیس نے تشدد کے الزام میں دو افراد کو حراست میں لے لیا ہے. ان مشتبہ افراد کی عمریں بائیس اور 23 سال کی ہیں.
دیگر ڈرائیوروں نے بھی احتجاج پیر تک کام کرنے سے انکار کردیا ہے اور سکیورٹی انتظامات کا مطالبہ کیا ہے .
حملہ اتنا شدید تھا کہ ان کے دماغ پر گہری چوٹیں آئیں اور ڈاکٹروں نے اسےدماغی طور پر مردہ قرار دے دیا.
ایک ہفتہ ہسپتال میں مصنوعی تنفس کے ساتھ زندہ رہا. تاہم ان کے اہل خانہ نے جمعہ کو لائف سپورٹ نظام بند کرنے کا فیصلہ کیا.
فرانس کے وزیراعظم نے بس ڈرائیور کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے ٹویٹ کیا کہ فرانس اس کو مثالی شہری کے طور پر کبھی نہیں بھولے گا.
مختلف سیاسی رہنماؤں نے اس واقعے کی مذمت کرتے ہوئے اسے ایک بزدلانہ حملہ کر دیا ہے..

اپنا تبصرہ بھیجیں